Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

روایت نہ ٹوٹے

کشور ناہید

روایت نہ ٹوٹے

کشور ناہید

MORE BYکشور ناہید

    ہم روایات کی کہنہ صدیوں کے پربت تلے

    وہ گھنے سبز جنگل ہیں جو

    بے پناہ شاخ در شاخ تابندگی

    تازگی کے تموج سے سنولا کے

    خود ہی جھلس جائیں

    ایسے جلیں ایسے جلیں

    کہ فقط دور تک کوئلہ کوئلہ ہی دکھائی دے

    اور تازگی کی نمو

    خاک سے بھی گواہی نہ دے

    وہ مقدر کے اچھے

    کہ جن کو جلاپے کی مدت گزرنے پہ

    ان کوئلوں کی جگہ ہیرے موتی ملے

    وہ مقدر کے اچھے

    کہ جن کی دعائیں زمیں کی تہوں میں وہیں

    تو کہیں سونا چاندی بنیں

    وہ مقدر کے اچھے

    کہ جن کے بدن کھولتے خوں کے چشمے تھے

    اب بھی ہیں

    پارے کی کانوں کی صورت کہیں

    تو کہیں ایسے بھی سخت جانوں کے ہیں سلسلے جا بجا

    جن سے فولاد کا نام پایندہ ہے

    وہ جلن جو کبھی تازگی کے تموج سے پیدا ہوئی

    ہے مقدر کی تحریر ایسی کہ جس کی جلن ابتدا

    انتہا بھی جلن

    جلتے رہنے کا یہ سانحہ بھی جلن

    انجمن انجمن

    چودھویں رات کے چاند نے بھی کہا

    بھیگی برسات کے رعد نے بھی کہا

    تم وہی ہو کہ جن کو چٹخنے کی مہلت بھی ملتی نہیں

    اب روایت یہی ہے

    نبھاؤ ہنسو

    مسکراؤ جلو

    ہر اک زرد چہرہ گلابی کرو

    ہر اک آنکھ کو ارغوانی کرو

    مگر یاد رکھو

    روایت نہ ٹوٹے

    تموج کی ہر تازگی لاکھ جھلسے

    روایت نہ ٹوٹے

    مأخذ :
    • کتاب : Muntakhab Shahkar Nazmon Ka Album) (Pg. 392)
    • Author : Munavvar Jameel
    • مطبع : Haji Haneef Printer Lahore (2000)
    • اشاعت : 2000
    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    ગુજરાતી ભાષા-સાહિત્યનો મંચ : રેખ્તા ગુજરાતી

    મધ્યકાલથી લઈ સાંપ્રત સમય સુધીની ચૂંટેલી કવિતાનો ખજાનો હવે છે માત્ર એક ક્લિક પર. સાથે સાથે સાહિત્યિક વીડિયો અને શબ્દકોશની સગવડ પણ છે. સંતસાહિત્ય, ડાયસ્પોરા સાહિત્ય, પ્રતિબદ્ધ સાહિત્ય અને ગુજરાતના અનેક ઐતિહાસિક પુસ્તકાલયોના દુર્લભ પુસ્તકો પણ તમે રેખ્તા ગુજરાતી પર વાંચી શકશો

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے