رت

MORE BYمخدومؔ محی الدین

    دل کا سامان اٹھاؤ

    جان کو نیلام کرو

    اور چلو

    درد کا چاند سر شام نکل آئے گا

    کیا مداوا ہے

    چلو درد پیو

    چاند کو پیمانہ بناؤ

    رت کی آنکھوں سے ٹپکنے لگے کالے آنسو

    رت سے کہہ دو

    کہ وہ پھر آئے

    چلو

    اس گل اندام کی چاہت میں بھی کیا کیا نہ ہوا

    درد پیدا ہوا درماں کوئی پیدا نہ ہوا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY