سچے وطن پرست کا گیت

لال چند فلک

سچے وطن پرست کا گیت

لال چند فلک

MORE BYلال چند فلک

    خوف آفت سے کہاں دل میں ریا آئے گی

    بات سچی ہے جو وہ لب پہ سدا آئے گی

    دل سے نکلے گی نہ مر کر بھی وطن کی الفت

    میری مٹی سے بھی خوشبوئے وفا آئے گی

    میں اٹھا لوں گا بڑے شوق سے اس کو سر پر

    خدمت قوم و وطن میں جو بلا آئے گی

    سامنا صبر و شجاعت سے کروں گا میں بھی

    کھنچ کے مجھ تک جو کبھی تیغ جفا آئے گی

    غیر زعم اور خودی سے جو کرے گا حملہ

    میری امداد کو خود ذات خدا آئے گی

    آتما ہوں میں بدل ڈالوں گا فوراً چولا

    کیا بگاڑے گی اگر میری قضا آئے گی

    خون روئے گی سما پر میرے مرنے پہ شفق

    غم منانے کے لیے کالی گھٹا آئے گی

    ابر تر اشک بہائے گا مرے لاشے پر

    خاک اڑانے کے لیے باد صبا آئے گی

    زندگانی میں تو ملنے سے جھجکتی ہے فلکؔ

    خلق کو یاد مری بعد فنا آئے گی

    مآخذ :
    • کتاب : Hamari Qaumi Shaeri (Pg. 474)
    • Author : Ali Jawad Zaidi
    • مطبع : Uttar Pradesh Urdu Acadmi (Lucknow) (1998)
    • اشاعت : 1998

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY