سناٹا

عابد ادیب

سناٹا

عابد ادیب

MORE BYعابد ادیب

    مختلف موضوعات پر

    رات بھر باتیں کرکے وہ لوگ

    تھک چکے تھے

    اور پھر

    ایسے وعدوں میں بندھ گئے تھے

    جس کا پورا ہونا ممکن نہ تھا

    کیونکہ کچھ لمحوں بعد

    وہ سب اپنا اپنا سامان اٹھائے

    مختلف راستوں پر چل پڑے تھے

    اور اسٹیشن پر سناٹا تھا

    مآخذ:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY