سونے والو جاگو

حفیظ جالندھری

سونے والو جاگو

حفیظ جالندھری

MORE BYحفیظ جالندھری

    جاگو سونے والو جاگو

    وقت کے کھونے والو جاگو

    باغ میں چڑیاں بول رہی ہیں

    کلیاں آنکھیں کھول رہی ہیں

    پھول خوشی سے جھوم رہے ہیں

    پتوں کا منہ چوم رہے ہیں

    جاگ اٹھے دریا اور نہریں

    جاگ اٹھیں موجیں اور لہریں

    ناؤ چلانے والے جاگے

    پار لگانے والے جاگے

    ساری دنیا جاگ رہی ہے

    کام کی جانب بھاگ رہی ہے

    لکھنے پڑھنے والو جاگو

    پھولنے بڑھنے والو جاگو

    منہ دھو دھا کر ناشتہ کھاؤ

    بستہ لے کر مدرسے جاؤ

    صبح کا سونا خوب نہیں ہے

    اچھا یہ اسلوب نہیں ہے

    جاگو سونے والو جاگو

    وقت کے کھونے والو جاگو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY