سنا ہے

زہرا نگاہ

سنا ہے

زہرا نگاہ

MORE BY زہرا نگاہ

    سنا ہے جنگلوں کا بھی کوئی دستور ہوتا ہے

    سنا ہے شیر کا جب پیٹ بھر جائے تو وہ حملہ نہیں کرتا

    درختوں کی گھنی چھاؤں میں جا کر لیٹ جاتا ہے

    ہوا کے تیز جھونکے جب درختوں کو ہلاتے ہیں

    تو مینا اپنے بچے چھوڑ کر

    کوے کے انڈوں کو پروں سے تھام لیتی ہے

    سنا ہے گھونسلے سے کوئی بچہ گر پڑے تو سارا جنگل جاگ جاتا ہے

    سنا ہے جب کسی ندی کے پانی میں

    بئے کے گھونسلے کا گندمی رنگ لرزتا ہے

    تو ندی کی روپہلی مچھلیاں اس کو پڑوسن مان لیتی ہیں

    کبھی طوفان آ جائے، کوئی پل ٹوٹ جائے تو

    کسی لکڑی کے تختے پر

    گلہری، سانپ، بکری اور چیتا ساتھ ہوتے ہیں

    سنا ہے جنگلوں کا بھی کوئی دستور ہوتا ہے

    خداوندا! جلیل و معتبر! دانا و بینا منصف و اکبر!

    مرے اس شہر میں اب جنگلوں ہی کا کوئی قانون نافذ کر!

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    زہرا نگاہ

    زہرا نگاہ

    RECITATIONS

    زہرا نگاہ

    زہرا نگاہ

    عذرا نقوی

    عذرا نقوی

    زہرا نگاہ

    سنا ہے زہرا نگاہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY