تبدیلی

زبیر رضوی

تبدیلی

زبیر رضوی

MORE BYزبیر رضوی

    صبح دم جب بھی دیکھا ہے میں نے کبھی

    ننھے بچوں کو اسکول جاتے ہوئے

    رقص کرتے ہوئے گنگناتے ہوئے

    اپنے بستوں کو گردن میں ڈالے ہوئے

    انگلیاں ایک کی ایک پکڑے ہوئے

    صبح دم جب بھی دیکھا ہے میں نے انہیں

    مامتا ان کی راہوں میں سایہ کرے

    ان کے قدموں میں خوشبو بچھایا کرے

    دیوتا ان کے ہاتھوں کو چوما کریں

    من ہی من ان کی باتوں پہ جھوما کریں

    صبح دم جب بھی دیکھا ہے میں نے انہیں

    میرا جی چاہتا ہے کہ میں دوڑ کر

    ایک ننھے کہ انگلی پکڑ کر کہوں

    مجھ کو بھی اپنے اسکول لیتے چلو

    تاکہ یہ تشنۂ آرزوئے زندگی

    پھر سے آغاز شوق سفر کر سکے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    زبیر رضوی

    زبیر رضوی

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY