تفصیل مسافت کی

فہمیدہ ریاض

تفصیل مسافت کی

فہمیدہ ریاض

MORE BYفہمیدہ ریاض

    اک دن جو بہم ہوں گے

    تجھ سے ترے درماندہ

    کیا عرض گزاریں گے

    کیا حال سنائیں گے

    موہوم کشیدہ ہے

    تصویر قیامت کی

    شاید نہ سنا پائیں

    تفصیل مسافت کی

    لب بستہ رہیں شاید

    یہ دن جو گزارے ہیں

    محرم ہے کوئی کس کا

    یا زخم کی سرگوشی

    یا ہمارے ہیں

    آنکھوں پہ کئے سایہ

    کب دور تلک دیکھا

    لرزاں تھی زمیں کس پل

    کب سوئے فلک دیکھا

    کب دشت کی تنہائی

    آنکھوں میں اتر آئی

    کب وہم سماعت تھی

    کب کھو گئی گویائی

    کس موڑ پہ حیراں تھے

    کس راہ میں ویراں تھے

    اجمال حقیقت کے

    شاید نہ رقم ہوں گے

    اک دن جو بہم ہوں گے

    تک لیں گے تری صورت

    اور سر کو جھکا لیں گے

    مل ڈالیں گے آنکھوں کو

    گر یاد سراب آئے

    گم صم تری چوکھٹ پر

    ہو جائیں گے ہم شاید

    چھو کر ترے دامن کو

    سو جائیں گے ہم شاید

    مأخذ :
    • کتاب : Pakistani Adab (Pg. 197)
    • Author : Dr. Rashid Amjad
    • مطبع : Pakistan Academy of Letters, Islambad, Pakistan (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY