تہنیت

MORE BYفہمیدہ ریاض

    کتنے بخت والے ہو

    زندگی میں جو چاہا

    تم نے پا لیا آخر

    عزم اور ہمت سے

    فہم سے ذکاوت سے

    ہے تمہارے دامن میں

    پھول کامرانی کا

    اور تمہارے ماتھے پر

    فخر کا ستارہ ہے

    اب تمہارے چہرے پر

    ایسی شادمانی ہے

    کوئی کہہ نہیں سکتا

    درد سے بھی واقف ہو

    اور تمہارے پاؤں میں

    دیر سے کھٹکتا ہے

    آرزو کا اک کانٹا

    جس سے خون رستا ہے

    لالہ زار راہوں پر

    اس لہو کی سرخی کی

    کانپتی لکیریں ہیں

    ان لہو کے دھبوں میں

    ناتمام مبہم سی

    ایک بات لکھی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY