واپسی

شہریار

واپسی

شہریار

MORE BYشہریار

    یہاں کیا ہے برہنہ تیرگی ہے

    خلا ہے آہٹیں ہیں تشنگی ہے

    یہاں جس کے لیے آئے تھے وہ شے

    کسی قیمت پہ بھی ملتی نہیں ہے

    جو اپنے ساتھ ہم لائے تھے وہ بھی

    یہیں کھو جائے گا گر کی نہ جلدی

    چلو جلدی چلو اپنے مکاں کے

    کواڑوں کی جبیں پر ثبت ہوگی

    کوئی دستک ابھی بیتے دنوں کی

    مآخذ :
    • کتاب : sooraj ko nikalta dekhoon (Pg. 69)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY