وقت کی آنکھیں

چندر بھان خیال

وقت کی آنکھیں

چندر بھان خیال

MORE BYچندر بھان خیال

    لمحہ لمحہ خونیں خنجر

    صدیاں جیبھیں ہیں سانپوں کی

    گھاٹ پہ بیٹھی پیاس کی دیوی

    اور جادوگر

    وقت کی آنکھیں دیکھ رہی ہیں

    مردہ گھر کے اک کمرے کے تیز دھویں میں

    ایک کنواری ننگی عورت

    چاٹ رہی ہے

    اپنے ہی بے رنگ لہو کو

    من کی آنکھیں کھول کے دیکھوں تو کیا دیکھوں

    سب تو سولی پر لٹکا ہے

    سب کچھ لٹا لٹا لگتا ہے

    کوئی چپکے سے کہتا ہے

    ننگی عورت کی جانگھوں میں سانپ ڈال کر میں سو جاؤں

    لیکن کوئی چیخ رہا ہے

    وقت کی آنکھیں دیکھ رہی ہیں

    لمحہ لمحہ خونیں خنجر

    صدیاں جیبھیں ہیں سانپوں کی

    مأخذ :
    • کتاب : Shoalon Ka Shajar (Pg. 74)
    • Author : Chander Bhan Khayal
    • مطبع : Sutoor Parkashan (1969)
    • اشاعت : 1969

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے