وہ کون تھا

شہریار

وہ کون تھا

شہریار

MORE BYشہریار

    وہ کون تھا وہ کون تھا

    طلسم شہر آرزو جو توڑ کر چلا گیا

    ہر ایک تار روح کا جھنجھوڑ کر چلا گیا

    مجھے خلا کے بازوؤں میں چھوڑ کر چلا گیا

    ستم شعار آسماں تو تھا نہیں

    اداسیوں کا راز داں تو تھا نہیں

    وہ میرا جسم ناتواں تو تھا نہیں

    تو کون تھا

    وہ کون تھا؟

    مآخذ :
    • کتاب : sooraj ko nikalta dekhoon (Pg. 88)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY