یہ باتیں چھوڑ دو

رئیس فروغ

یہ باتیں چھوڑ دو

رئیس فروغ

MORE BYرئیس فروغ

    اجی ہٹاؤ چھوڑو بھی

    ان باتوں میں کیا رکھا ہے

    امی نے کہا بس کھیل چکو

    اور منا منی روٹھ گئے

    یوں شکل بنائی دونوں نے

    دل جیسے سچ مچ ٹوٹ گئے

    باجی نے کہا اس کیاری میں

    جو پھول تھا کس نے توڑ لیا

    یہ بات تھی جس پر آپ بہت

    ناراض ہوئے منہ موڑ لیا

    بھیا سے ہماری کٹی ہے

    کیوں کڑوی دوائی لائے ہیں

    ابو سے نہیں ہم بولیں گے

    انجکشن کیوں لگوائے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY