aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

زخم تمنا

جنید حزیں لاری

زخم تمنا

جنید حزیں لاری

MORE BYجنید حزیں لاری

    ایک پھول کا چمن میں طلب گار میں ہوا

    وہ پھول کھل رہا تھا سر شاخ آرزو

    وہ پھول صد ہزار گلستاں میں انتخاب

    وہ پھول دل کشی کی کہانی کا شوخ باب

    دوشیزگی کا خواب بہاروں کی آب و تاب

    ہر پنکھڑی نزاکت و نزہت لئے ہوئے

    وہ گل تھا عطر‌ دان محبت لئے ہوئے

    جذبات کی تپش سے مچلنے لگا تھا میں

    گرمی آرزو سے پگھلنے لگا تھا میں

    ریشم کا جسم رکھتے ہوئے خار بن گیا

    وہ پھول میری جان کا آزار بن گیا

    اک روز میرے ساتھ ہوا واقعہ عجب

    بیتاب ہو کے دست طلب جب کیا دراز

    حاصل جو سامنے تھا بہت دل خراش تھا

    مانوس انگلیاں جو ہوئیں نوک خار سے

    ایک ایک قطرہ

    ان سے ٹپکنے لگا لہو

    وہ ٹیس تھی کہ

    مجھ کو

    خدا یاد آ گیا

    مأخذ:

    Intekhab-e-Kalam Hazin (Pg. 39)

    • مصنف: Author Junaid Hazin Lari,Compiled by Razzaq Afsar
      • اشاعت: 1996
      • ناشر: Bazm-e-Urdu, Mysore
      • سن اشاعت: 1996

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے