Farooq Engineer's Photo'

فاروق انجینئر

1960

آنکھوں کو یوں بھا گیا اس کا روپ انوپ

سردی میں اچھی لگے جیسے کچی دھوپ

سمے کے دھارے دیکھ کر ہوتا ہے وشواس

ایک نہ ایک دن دیکھنا شیر چریں گے گھاس

کس کو اب دکھلائیں ہم اپنے دل کا خون

سنتے آئے ہیں یہی اندھا ہے قانون