Jigar Moradabadi's Photo'

جگر مراد آبادی

1890 - 1961 | مراد آباد, ہندوستان

ممتاز ترین قبل ازجدید شاعروں میں نمایاں، بے پناہ مقبولیت کے لئے معروف

ممتاز ترین قبل ازجدید شاعروں میں نمایاں، بے پناہ مقبولیت کے لئے معروف

غزل

آدمی آدمی سے ملتا ہے

اگر نہ زہرہ_جبینوں کے درمیاں گزرے

اگر نہ زہرہ_جبینوں کے درمیاں گزرے

اک لفظ_محبت کا ادنیٰ یہ فسانا ہے

جان کر من_جملۂ_خاصان_مے_خانہ مجھے

جہل_خرد نے دن یہ دکھائے

دل گیا رونق_حیات گئی

دل میں کسی کے راہ کئے جا رہا ہوں میں

دل کو سکون روح کو آرام آ گیا

دنیا کے ستم یاد نہ اپنی ہی وفا یاد

دنیا کے ستم یاد نہ اپنی ہی وفا یاد

راز جو سینۂ_فطرت میں نہاں ہوتا ہے

شب_فراق ہے اور نیند آئی جاتی ہے

عشق کو بے_نقاب ہونا تھا

عشق کو بے_نقاب ہونا تھا

لاکھوں میں انتخاب کے قابل بنا دیا

محبت صلح بھی پیکار بھی ہے

نظر ملا کے مرے پاس آ کے لوٹ لیا

وہ ادائے_دلبری ہو کہ نوائے_عاشقانہ

کبھی شاخ و سبزہ و برگ پر کبھی غنچہ و گل و خار پر

کثرت میں بھی وحدت کا تماشا نظر آیا

ہر حقیقت کو بانداز_تماشا دیکھا

یہ مصرع کاش نقش_ہر_در_و_دیوار ہو جائے

اللہ رے اس گلشن_ایجاد کا عالم

برابر سے بچ کر گزر جانے والے

جو طوفانوں میں پلتے جا رہے ہیں

حسن کے احترام نے مارا

رکھتے ہیں خضر سے نہ غرض رہ_نما سے ہم

شب_وصل کیا مختصر ہو گئی

شرما گئے لجا گئے دامن چھڑا گئے

نقاب_حسن_دوعالم اٹھائی جاتی ہے

نہ دیکھا رخ بے_نقاب_محبت

کیا برابر کا محبت میں اثر ہوتا ہے

یادش_بخیر جب وہ تصور میں آ گیا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Added to your favorites

Removed from your favorites