دن کی صورت نظر آتے ہی مری رات ہوئی

حفیظ جالندھری

دن کی صورت نظر آتے ہی مری رات ہوئی

حفیظ جالندھری

MORE BYحفیظ جالندھری

    دن کی صورت نظر آتے ہی مری رات ہوئی

    بازی آغاز نہ پائی تھی کہ شہ مات ہوئی

    زندگی بھی نہیں سمجھی مرے مر مٹنے کو

    موت بھی پوچھتی پھرتی ہے یہ کیا بات ہوئی

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Hafeez Jalandhari (Pg. 735)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY