حیران ہو کے منہ مرا تکتے ہیں بار بار

حفیظ جالندھری

حیران ہو کے منہ مرا تکتے ہیں بار بار

حفیظ جالندھری

MORE BYحفیظ جالندھری

    حیران ہو کے منہ مرا تکتے ہیں بار بار

    احساں کیا یہ گریۂ بے اختیار نے

    اغیار سے بھی کرنے لگے وعدہ ہائے حشر

    عادت بگاڑ دی ہے مرے اعتبار نے

    مأخذ :
    • کتاب : Kulliyat-e-Hafeez Jalandhari (Pg. 734)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY