موت کی آگ میں تپ تپ کے نکھرتی ہے حیات

علی سردار جعفری

موت کی آگ میں تپ تپ کے نکھرتی ہے حیات

علی سردار جعفری

MORE BYعلی سردار جعفری

    موت کی آگ میں تپ تپ کے نکھرتی ہے حیات

    ڈوب کر جنگ کے دریا میں ابھرتی ہے حیات

    زلف کی طرح بگڑتی ہے سنورتی ہے حیات

    وقت کے دوش بلوریں پہ بکھرتی ہے حیات

    مآخذ:

    • کتاب : Kulliyat-e-Ali Sardar Jafri(Vol-I) (Pg. 382)

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY