در بدر بھیک ہی مانگے گا موا میرے بعد

محسن خان محسن

در بدر بھیک ہی مانگے گا موا میرے بعد

محسن خان محسن

MORE BYمحسن خان محسن

    در بدر بھیک ہی مانگے گا موا میرے بعد

    یاد رکھنا یہ مری بات بوا میرے بعد

    کسبی کیا کیا نہ لگائے گی بلا میرے بعد

    ریش میں کون لگائے گی حنا میرے بعد

    پھول بھی دو نہ چڑھائے مری تربت پہ کبھی

    ایسے سوکن نے دیئے پھول پڑھا میرے بعد

    بوا کیا کیا نہ بگاڑیں گے گھروندا اپنا

    لوٹ لے گی موئی کسبی کی ادا میرے بعد

    ظلم سہہ سہہ کے چھنالوں کے پشیماں ہوں گے

    میرے جینے کی وہ مانگیں گے دعا میرے بعد

    میں بوا ان کے لیے شوق سے لوں راہ عدم

    راہ پر لائے جو دولہا کو خدا میرے بعد

    رنگ کیا کیا نہ موئی لائے گی مہندی بیگم

    خون تھوکے گی ہزاروں میں حنا میرے بعد

    سامنے پھوٹے اگر شیخ تو منہ نوچ لوں میں

    کہتا سب کچھ بوا پھرتا ہے موا میرے بعد

    پانی ہو ہو کے بہیں گی یہ جفائیں قبلہ

    جوش پر آئے گا جب خون وفا میرے بعد

    ستم یار سے کہتی ہے وفا کی حسرت

    ہوگی اب کس پہ نگوڑی یہ جفا میرے بعد

    ہائے نواب ستمگر کی کدورت نہ گئی

    ہوگی حسرت کی لب گور صدا میرے بعد

    منہ لگے بھڑوے بنائیں گے نہ کیا کیا ابتر

    چوک جا جا کے نہ ہو جائیں گے کیا میرے بعد

    جیتے جی شرم نہ محسنؔ کو جب آئی گوئیاں

    خاک آئے گی نگوڑے کو حیا میرے بعد

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY