کس پہ جھپٹا موا شکاری آج

محسن خان محسن

کس پہ جھپٹا موا شکاری آج

محسن خان محسن

MORE BYمحسن خان محسن

    کس پہ جھپٹا موا شکاری آج

    چیخ پر چیخ کس نے ماری آج

    آدھی بر سر تمہاری ساری آج

    دیکھ لی ہم نے ساری پیاری آج

    سوت کو بھیجئے سواری آج

    ہے اسی رو سیہ کی باری آج

    دیکھ لی ہم نے شب کی بیداری

    مانتی کیوں نہیں وہ واری آج

    ہے دل آرام دیتی ہے آرام

    کیوں نہ بلوائیں رام پیاری آج

    ایسا مارا موئی کو پھرتی ہے

    ماری ماری تمہاری ماری آج

    کل کی گردھاری چھوڑ دو کل پر

    دیکھو کیا دیتے ہیں مراری آج

    ایسی بے خبری اوئی معاذ اللہ

    نہیں لیتے خبر ہماری آج

    الٹے الٹے ہوئے ہیں شوق انہیں

    لونڈے بلوائے راس دھاری آج

    کیوں نہ بلوایا مال زادی کو

    کسبی کیا ہو گئی دلاری آج

    ہوتی دل میں نہ گر وہ پردہ نشیں

    مجھ سے کیوں ہوتی پردہ داری آج

    کل چمن میں تھی گل کے پہلو میں

    شبو پھرتی ہے ماری ماری آج

    خاک ساروں سے ہے ملال انہیں

    ملی مٹی میں خاک ساری آج

    ہائے افسوس چھٹ گئی عنقاؔ

    رہا محسنؔ بہ اشک و زاری آج

    راست کہتی ہوں آپ کا عنقاؔ

    حصہ ہے ریختی نگاری آج

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY