کس سے گرمی کا رکھا جائے یہ بھاری روزہ

رنگیں سعادت یار خاں

کس سے گرمی کا رکھا جائے یہ بھاری روزہ

رنگیں سعادت یار خاں

MORE BYرنگیں سعادت یار خاں

    کس سے گرمی کا رکھا جائے یہ بھاری روزہ

    سردی ہووے تو رکھے مجھ سی بچاری روزہ

    دیکھ پنسورے میں تاریخ بتا دے مجھ کو

    اب کے آ تو جی رکھوں گی میں ہزاری روزہ

    منہ پہ کچھ رکھتی نہیں اپنے وہ پن بھتی میں

    کھولتی جب ہے ددا میری دلاری روزہ

    آج سے فرنی و فالودہ کی تیاری کر

    کل ہے نو چندی رکھے گی میری پیاری روزہ

    میرا منہ اترا ہوا دیکھ کے کہتی ہے جیا

    آج تو کر کے نہ رکھ منت و زاری روزہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY