ہم اس کی جفا سے جی میں ہو کر دلگیر

نظیر اکبرآبادی

ہم اس کی جفا سے جی میں ہو کر دلگیر

نظیر اکبرآبادی

MORE BYنظیر اکبرآبادی

    ہم اس کی جفا سے جی میں ہو کر دلگیر

    رک بیٹھے تو ہیں ولے کریں کیا تقریر

    دل ہاتھ سے جاتا ہے بغیر اس سے ملے

    اب جو نہ پڑیں پاؤں تو پھر کیا تدبیر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY