ٹوٹی ہوئی بانبی میں وہ بس لیتا ہے

قتیل شفائی

ٹوٹی ہوئی بانبی میں وہ بس لیتا ہے

قتیل شفائی

MORE BYقتیل شفائی

    ٹوٹی ہوئی بانبی میں وہ بس لیتا ہے

    بھوکا ہو تو کچھ روز ترس لیتا ہے

    اس پر بھی نہیں سانپ کو ڈستا کوئی سانپ

    انساں مگر انسان کو ڈس لیتا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Nuquush (Pg. 485)
    • Author : Mohammad Tufail
    • مطبع : Idara-e-Frog-e-Urdu, Lahore (1985,Issue No. 132)
    • اشاعت : 1985,Issue No. 132

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY