احمد حسین مائل کے 10 منتخب شعر

حیدرآباد دکن کے پرگو اور قادرالکلام شاعر، جنہوں نے نہایت سنگلاخ اور مشکل زمینوں میں شاعری کی، رباعی گوئی کے لیے بھی جانے جاتے ہیں

مجھ سے بگڑ گئے تو رقیبوں کی بن گئی

غیروں میں بٹ رہا ہے مرا اعتبار آج

احمد حسین مائل

پیار اپنے پہ جو آتا ہے تو کیا کرتے ہیں

آئینہ دیکھ کے منہ چوم لیا کرتے ہیں

احمد حسین مائل

اگرچہ وہ بے پردہ آئے ہوئے ہیں

چھپانے کی چیزیں چھپائے ہوئے ہیں

احمد حسین مائل

توبہ کھڑی ہے در پہ جو فریاد کے لئے

یہ مے کدہ بھی کیا کسی قاضی کا گھر ہوا

احمد حسین مائل

محبت نے مائلؔ کیا ہر کسی کو

کسی پر کسی کو کسی پر کسی کو

احمد حسین مائل

جو آئے حشر میں وہ سب کو مارتے آئے

جدھر نگاہ پھری چوٹ پر لگائی چوٹ

احمد حسین مائل

میں ہی مومن میں ہی کافر میں ہی کعبہ میں ہی دیر

خود کو میں سجدے کروں گا دل میں تم ہو دل میں تم

احمد حسین مائل

واعظ کا اعتراض یہ بت ہیں خدا نہیں

میرا یہ اعتقاد کہ جلوے خدا کے ہیں

احمد حسین مائل

ناز کر ناز ترے ناز پہ ہے ناز مجھے

میری تنہائی ہے پرتو تری یکتائی کا

احمد حسین مائل

بند قبا میں باندھ لیا لے کے دل مرا

سینہ پہ اس کے پھول کھلا ہے گلاب کا

احمد حسین مائل