Filter : Date

Section:

کیا آپ کو معلوم ہے؟

عصمت

منٹو نے عصمت چغتائی پر ایک مونوگراف 'نئے ادب کے معمار کے' تحت  لکھا تھا، جو 1948میں بمبئ کے  کتب پبلشرس نے شایع کیا تھا۔ اس کے پہلے ہی صفحے پر حیدر آباد سے منٹو کے نام آئے ہوئے ایک خط کا ذکر ہے۔ خط میں ایک صاحب نے لکھا تھا۔ 
" یہ کیا بات ہوئ کہ عصمت چعقتائ نے آپ سے شادی نہیں کی ؟ منٹو اور عصمت اگر یہ دو ہستیاں مل جاتیں تو کتنا اچھا ہوتا۔ مگر افسوس کہ عصمت نے شاہد سے شادی کرلی۔ اور منٹو ٠٠٠ " 
ان ہی دنوں حیدرآباد میں ترقی پسند مصنفوں کی کانفرنس ہوئ تھی، جس میں منٹو شریک نہیں ہوئے تھے۔ حیدرآباد کے ایک رسالے میں اس کانفرنس کی روداد چھپی تھی، جس میں لکھا تھا کہ وہاں کئ لڑکیوں نے عصمت کو گھیر کر یہ سوال کیا تھا کہ آپ نے منٹو سے شادی کیوں نہیں کی۔ 
منٹو نے اس بارے میں لکھا ہے کہ یہ بات غیر معمولی طور پر دلچسپ ہے کہ سارے ہندوستان میں حیدرآباد ہی ایک ایسی جگہ ہے جہاں مرد اور عورتیں میری اور عصمت کی شادی کے متعلق فکر مند رہے۔
 عصمت منٹو کو منٹو بھائ کہتی تھیں۔ بمبئ میں کئ سال ان دونوں کا ساتھ رہا۔ دونوں میں بہت دوستی بھی تھی اور بحث مباحثہ بھی ہوتا تھا۔