Karamat Ali Karamat's Photo'

کرامت علی کرامت

1936 | اڑیسہ, ہندوستان

غزل 14

نظم 1

 

اشعار 13

ہمیشہ آگ کے دریا میں عشق کیوں اترے

کبھی تو حسن کو غرق عذاب ہونا تھا

  • شیئر کیجیے

منزل پہ بھی پہنچ کے میسر نہیں سکوں

مجبور اس قدر ہیں شعور سفر سے ہم

  • شیئر کیجیے

کوئی زمین ہے تو کوئی آسمان ہے

ہر شخص اپنی ذات میں اک داستان ہے

  • شیئر کیجیے

ای- کتاب 10

آب خضر

 

1963

گل کدۂ صبح وشام

 

2016

اضافی تنقید

 

1977

کرامت علی کرامت: ایک مطالعہ

 

2012

لفظوں کا آسمان

 

1984

نئے تنقیدی مسائل اور امکانات

تنقیدی مضامین کا مجموعہ

2009

شاخ صنوبر

 

2006

شعاعوں کی صلیب

 

1972

دی اسٹوری آف دی وے اینڈ ادر پویمس

 

1990

طلوع سحر

 

1961

 

تصویری شاعری 1

کوئی زمین ہے تو کوئی آسمان ہے ہر شخص اپنی ذات میں اک داستان ہے