Shafiq Jaunpuri's Photo'

شفیق جونپوری

1902 - 1963 | جون پور, ہندوستان

غزل 9

اشعار 5

تجھے ہم دوپہر کی دھوپ میں دیکھیں گے اے غنچے

ابھی شبنم کے رونے پر ہنسی معلوم ہوتی ہے

عشق کی ابتدا تو جانتے ہیں

عشق کی انتہا نہیں معلوم

  • شیئر کیجیے

جلا وہ شمع کہ آندھی جسے بجھا نہ سکے

وہ نقش بن کہ زمانہ جسے مٹا نہ سکے

  • شیئر کیجیے

کتاب 11

انتخاب غزلیات شفیق جونپوری

 

1989

انتخاب کلام شفیق جونپوری

 

1962

خرمن

 

1964

نے

 

 

پھول اور چراغ

 

1965

سفینہ

 

 

شانہ

 

1963

شفیق جونپوری شخصیت اور فن

 

1983

شفیق جونپوری: ایک مطالعہ

 

2002

شفیق جونپوری

 

1962

تصویری شاعری 1

جلا وہ شمع کہ آندھی جسے بجھا نہ سکے وہ نقش بن کہ زمانہ جسے مٹا نہ سکے

 

آڈیو 6

ایسی نیند آئی کہ پھر موت کو پیار آ ہی گیا

پردہ پڑا ہوا تھا خودی نے اٹھا دیا

وہ گرم آنسوؤں کی روانی تمام رات

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI