Umair Manzar's Photo'

عمیر منظر

1974 | لکھنؤ, ہندوستان

غزل

بنا کے وہم و گماں کی دنیا حقیقتوں کے سراب دیکھوں

عمیر منظر

جب انسان کو اپنا کچھ ادراک ہوا

عمیر منظر

خود کو ہر روز امتحان میں رکھ

عمیر منظر

علم و فن کے راز_سر_بستہ کو وا کرتا ہوا

عمیر منظر

کبھی اقرار ہونا تھا کبھی انکار ہونا تھا

عمیر منظر

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI