ہمارا خواب اگر خواب کی خبر رکھے

رمزی آثم

ہمارا خواب اگر خواب کی خبر رکھے

رمزی آثم

MORE BYرمزی آثم

    ہمارا خواب اگر خواب کی خبر رکھے

    تو یہ چراغ بھی مہتاب کی خبر رکھے

    اٹھا نہ پائے گی آسودگی تھکن کا بوجھ

    سفر کی گرد ہی اعصاب کی خبر رکھے

    تمام شہر گرفتار ہے اذیت میں

    کسے کہوں مرے احباب کی خبر رکھے

    نہیں ہے فکر اگر شہر کی مکانوں کو

    تو کوئی دشت ہی سیلاب کی خبر رکھے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    ہمارا خواب اگر خواب کی خبر رکھے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY