جنوں کو رخت کیا خاک کو لبادہ کیا

احمد خیال

جنوں کو رخت کیا خاک کو لبادہ کیا

احمد خیال

MORE BYاحمد خیال

    جنوں کو رخت کیا خاک کو لبادہ کیا

    میں دشت دشت بھٹکنے کا جب ارادہ کیا

    میں ناصحان کی سنتا ہوں اور ٹالتا ہوں

    سو قرب حسن چھٹا اور نہ ترک بادہ کیا

    مہکتے پھول ستارے دمکتا چاند دھنک

    ترے جمال سے کتنوں نے استفادہ کیا

    ہزار رنگ میں جلوہ نما تھا حسن و جمال

    دل اور شوخ ہوا اس کو جتنا سادہ کیا

    وہ دے رہا تھا طلب سے سوا سبھی کو خیالؔ

    سو میں نے دامن دل اور کچھ کشادہ کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے