کچھ ایسے زخم زمانہ کا اندمال کیا

عارف امام

کچھ ایسے زخم زمانہ کا اندمال کیا

عارف امام

MORE BYعارف امام

    کچھ ایسے زخم زمانہ کا اندمال کیا

    کبھی نماز پڑھی اور کبھی دھمال کیا

    لگائی ضرب شدید اپنے دل پہ مستی میں

    خدا سے ٹوٹا ہوا رابطہ بحال کیا

    اسی کی بات لکھی چاہے کم لکھی ہم نے

    اسی کا ذکر کیا چاہے خال خال کیا

    لو ہم نے ڈھال لیا خود کو اس کے پیکر میں

    لو ہم نے ہجر کے عرصے کو بھی وصال کیا

    تمہارے ہجر میں مرنا تھا کون سا مشکل

    تمہارے ہجر میں زندہ ہیں یہ کمال کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے