نہ آئے سامنے میرے اگر نہیں آتا

زین العابدین خاں عارف

نہ آئے سامنے میرے اگر نہیں آتا

زین العابدین خاں عارف

MORE BYزین العابدین خاں عارف

    نہ آئے سامنے میرے اگر نہیں آتا

    مجھے تو اس کے سوا کچھ نظر نہیں آتا

    بلا اسے بھی تو کہتے ہیں لوگ عالم میں

    عجب ہے کس لیے وہ میرے گھر نہیں آتا

    وہ میرے سامنے طوبیٰ کو قد سے ماپ چکے

    انہوں کے نام خدا تا کمر نہیں آتا

    نہ بے خطر رہو مجھ سے کہ درد مندوں کے

    لبوں پہ نالہ کوئی بے خطر نہیں آتا

    ڈرا دیا ہے کسی نے اسے مگر عارفؔ

    مرے خرابے کی جانب خضر نہیں آتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY