وہ مقام دل و جاں کیا ہوگا

باقی صدیقی

وہ مقام دل و جاں کیا ہوگا

باقی صدیقی

MORE BYباقی صدیقی

    وہ مقام دل و جاں کیا ہوگا

    تو جہاں آخری پردا ہوگا

    منزلیں راستہ بن جاتی ہیں

    ڈھونڈنے والوں نے دیکھا ہوگا

    سائے میں بیٹھے ہوئے سوچتے ہیں

    کون اس دھوپ میں چلتا ہوگا

    تیری ہر بات پہ چپ رہتے ہیں

    ہم سا پتھر بھی کوئی کیا ہوگا

    ابھی دل پر ہیں جہاں کی نظریں

    آئنہ اور بھی دھندلا ہوگا

    راز سر بستہ ہے محفل تیری

    جو سمجھ لے گا وہ تنہا ہوگا

    اس طرح قطع تعلق نہ کرو

    اس طرح اور بھی چرچا ہوگا

    بعد مدت کے چلے دیوانے

    کیا ترے شہر کا نقشہ ہوگا

    سب کا منہ تکتے ہیں یوں ہم جیسے

    کوئی تو بات سمجھتا ہوگا

    پھول یہ سوچ کے کھل اٹھتے ہیں

    کوئی تو دیدۂ بینا ہوگا

    خود سے ہم دور نکل آئے ہیں

    تیرے ملنے سے بھی اب کیا ہوگا

    ہم ترا راستہ تکتے ہوں گے

    اور تو سامنے بیٹھا ہوگا

    خود کو یاد آنے لگے ہم باقیؔ

    پھر کسی بات پہ جھگڑا ہوگا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    باقی صدیقی

    باقی صدیقی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY