عالم وحشت تنہائی ہے کچھ اور نہیں

انجم اعظمی

عالم وحشت تنہائی ہے کچھ اور نہیں

انجم اعظمی

MORE BYانجم اعظمی

    عالم وحشت تنہائی ہے کچھ اور نہیں

    سر پہ اک گنبد بینائی ہے کچھ اور نہیں

    کیوں ہوا مجھ کو عنایت کی نظر کا سودا

    آج رسوائی ہی رسوائی ہے کچھ اور نہیں

    اپنا گھر پھونک چکا اپنا وطن چھوڑ چکا

    یہ فقط بادیہ پیمائی ہے کچھ اور نہیں

    ہو سکے تو کوئی فردا کی بنا لو تصویر

    وقت جلووں کا تمنائی ہے کچھ اور نہیں

    آؤ خوش ہو کے پیو کچھ نہ کہو واعظ کو

    میکدے میں وہ تماشائی ہے کچھ اور نہیں

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY