آنکھوں میں حیا آ جاتی ہے ہونٹوں پہ تبسم لاتے ہیں

جمیل الدین عالی

آنکھوں میں حیا آ جاتی ہے ہونٹوں پہ تبسم لاتے ہیں

جمیل الدین عالی

MORE BYجمیل الدین عالی

    آنکھوں میں حیا آ جاتی ہے ہونٹوں پہ تبسم لاتے ہیں

    وہ مجھ پہ ستم جب کرتے ہیں تصویر کرم بن جاتے ہیں

    اب آپ عنایت کرنے کی تکلیف ہی کیوں فرماتے ہیں

    دن یوں بھی گزرنے ہی ٹھہرے دن یوں بھی گزر ہی جاتے ہیں

    اللہ رے خس و خاشاک سے یہ ہنس ہنس کے چٹانوں کا کہنا

    وہ طوفاں کو کیا سمجھیں گے جو طوفاں میں بہہ جاتے ہیں

    اک سمت مسلسل امیدیں اک سمت مسلسل محرومی

    کب تک یہ اٹھے بار ہستی شانے ہیں کہ ٹوٹے جاتے ہیں

    اب ایسی کرم کی باتوں سے دبتی ہیں کہیں دل کی چوٹیں

    تم جتنا مٹاتے جاتے ہو یہ نقش ابھرتے آتے ہیں

    اس دور پریشانی میں کبھی وہ وقت بھی آتا ہے عالیؔ

    کچھ دل بھی دھوکے کھاتا ہے کچھ وہ بھی کرم فرماتے ہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY