آؤ ہم تم عشق کے اظہار کی باتیں کریں

قیصر صدیقی

آؤ ہم تم عشق کے اظہار کی باتیں کریں

قیصر صدیقی

MORE BYقیصر صدیقی

    آؤ ہم تم عشق کے اظہار کی باتیں کریں

    ڈال کر بانہوں میں باہیں پیار کی باتیں کریں

    پھول کی باتیں کریں گلزار کی باتیں کریں

    پیار کی باتیں کریں بس پیار کی باتیں کریں

    بات ہم دونوں کو یہ تو سوچنی ہی چاہئے

    پیار کے موسم میں کیوں تکرار کی باتیں کریں

    اس سے اچھی بات کوئی اور ہو سکتی نہیں

    یار کا افسانہ چھیڑیں یار کی باتیں کریں

    کاش بچپن لوٹ آئے اور ہم سب بیٹھ کر

    کچی مٹی کے در و دیوار کی باتیں کریں

    شکریہ بازاریت کی روشنی کا شکریہ

    گاؤں کی پگڈنڈیاں بازار کی باتیں کریں

    کعبہ و کاشی کے قصے ہو چکے اب بس کرو

    آؤ قیصرؔ نقش پائے یار کی باتیں کریں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY