آپ بلائیں ہم نہ آئیں ایسی کوئی بات نہیں

سید عارف علی عارف

آپ بلائیں ہم نہ آئیں ایسی کوئی بات نہیں

سید عارف علی عارف

MORE BYسید عارف علی عارف

    آپ بلائیں ہم نہ آئیں ایسی کوئی بات نہیں

    دنیا والوں سے ڈر جائیں ایسی کوئی بات نہیں

    تیرے سوا ہیں اس دنیا میں اپنے بھی غم خوار بہت

    سب کو دل کا راز سنائیں ایسی کوئی بات نہیں

    راہ وفا میں ہم نے یارو ساری عمر گزاری ہے

    چلتے چلتے ٹھوکر کھائیں ایسی کوئی بات نہیں

    سارے رشتے سارے بندھن پیار کے اب تک قائم ہے

    ان کو اپنے دل سے بھلائیں ایسی کوئی بات نہیں

    میٹھی میٹھی باتیں کرنا ہم سے بھی تو آتی ہیں

    لیکن آپ کا دل بہلائیں ایسی کوئی بات نہیں

    تیری جدائی غم کا عالم یہ سب ہے تقدیر کی دین

    رو رو کر ہم اشک بہائیں ایسی کوئی بات نہیں

    غم کے مارے اس دنیا میں عارفؔ اب تک زندہ ہیں

    غم سے تمہارے ہم گھبرائیں ایسی کوئی بات نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے