آس کے پر کیف موسم کا اثر کیسا لگا

بہارالنساء بہار

آس کے پر کیف موسم کا اثر کیسا لگا

بہارالنساء بہار

MORE BYبہارالنساء بہار

    آس کے پر کیف موسم کا اثر کیسا لگا

    اس بہار نو شگفتہ کا ثمر کیسا لگا

    میں نہ کہتی تھی اداسی کے سوا کچھ بھی نہیں

    آپ نے دیکھا مرا ویران گھر کیسا لگا

    میں نے اک بت کو تراشا ہے زمانے کے لئے

    اے ہنر مندو مرا کار ہنر کیسا لگا

    ظلمتوں کے ساتھ تو تم نے نبھایا عمر بھر

    شب گزیدہ لوگو انداز سحر کیسا لگا

    کیسا منظر ہے کہ ہے گل پوش دنیا کا دروغ

    زندگی کا سچ مقام دار پر کیسا لگا

    یہ بتاؤ لوٹ کر آ ہی گئے ہو تم اگر

    زیست کے بے نام شہروں کا سفر کیسا لگا

    میں نے دروازہ تری خاطر کیا تھا وا بہارؔ

    تو بتا دے تجھ کو الفت کا نگر کیسا لگا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY