اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم

احمد فراز

اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم

احمد فراز

MORE BY احمد فراز

    اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم

    یہ بھی بہت ہے تجھ کو اگر بھول جائیں ہم

    صحرائے زندگی میں کوئی دوسرا نہ تھا

    سنتے رہے ہیں آپ ہی اپنی صدائیں ہم

    اس زندگی میں اتنی فراغت کسے نصیب

    اتنا نہ یاد آ کہ تجھے بھول جائیں ہم

    تو اتنی دل زدہ تو نہ تھی اے شب فراق

    آ تیرے راستے میں ستارے لٹائیں ہم

    وہ لوگ اب کہاں ہیں جو کہتے تھے کل فرازؔ

    ہے ہے خدا نہ کردہ تجھے بھی رلائیں ہم

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اب اور کیا کسی سے مراسم بڑھائیں ہم نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites