اب چلو دیکھ لیں یہی کر کے

فیض راحیل خان

اب چلو دیکھ لیں یہی کر کے

فیض راحیل خان

MORE BYفیض راحیل خان

    اب چلو دیکھ لیں یہی کر کے

    اپنے ماضی پہ شاعری کر کے

    لے گئی راتیں پھر اجالوں کو

    پھر سے باتیں بڑی بڑی کر کے

    راتیں مجھ میں سکون کتنا ہے

    ہم نے دیکھا یہ بندگی کر کے

    زندگی اک کتاب تھی پھر بھی

    لوگ گزرے غلط سہی کر کے

    لوٹنا ہے مجھے وہیں یاروں

    ان کے ہی نام زندگی کر کے

    فیضؔ سودا نہیں کیا ہم نے

    ان اندھیروں سے روشنی کر کے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY