اگر گل میں پیارے تری بو نہ ہووے

عشق اورنگ آبادی

اگر گل میں پیارے تری بو نہ ہووے

عشق اورنگ آبادی

MORE BYعشق اورنگ آبادی

    اگر گل میں پیارے تری بو نہ ہووے

    وہ منظور بلبل کسی رو نہ ہووے

    ترے بن تو فردوس مجھ کو جہنم

    قیامت ہو مجھ پر اگر تو نہ ہووے

    ہو اس بزم میں شمع کب رونق افزا

    جہاں محفل افروز مہ رو نہ ہووے

    یہ آئینہ لے جا کے پتھر سے پھوڑوں

    پری کا اگر درمیاں رو نہ ہووے

    مہکتی ہے زلف سیہ اس کی ہر رات

    کہیں اس میں عشقؔ عطر شبو نہ ہووے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے