اے میرے شہر عشق ترا کیسا بخت ہے

احسان گھمن

اے میرے شہر عشق ترا کیسا بخت ہے

احسان گھمن

MORE BYاحسان گھمن

    اے میرے شہر عشق ترا کیسا بخت ہے

    میں جس کو دیکھتا ہوں وہی لخت لخت ہے

    خوش ہو رہا ہوں اس لئے مٹی پہ بیٹھ کر

    یارو یہی زمین مرا پہلا تخت ہے

    چھاؤں کی جستجو بھی کہاں لے کے آ گئی

    صحرا سے پوچھتا ہوں کہیں پر درخت ہے

    دنیا مرے مزاج کو سمجھی نہیں ابھی

    شاید اسی لئے میرا لہجہ کرخت ہے

    اک پل میں کیسے نکلوں میں دنیا سمیٹ کر

    ساری زمیں پہ بکھرا ہوا میرا رخت ہے

    احسانؔ وہ تو پھول سے نازک لگا مجھے

    میں تو سمجھ رہا تھا وہ پتھر سے سخت ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY