عین ممکن ہے مری بات ذرا سی نکلے

نیلوفر نور

عین ممکن ہے مری بات ذرا سی نکلے

نیلوفر نور

MORE BYنیلوفر نور

    عین ممکن ہے مری بات ذرا سی نکلے

    کوئی تصویر مرے دل سے تمہاری نکلے

    آج آنگن میں ترے ہجر کا سورج نکلا

    آج ممکن ہے مرے زخم سے کرچی نکلے

    اس نے اس شرط پہ رونے کی اجازت دی ہے

    آہ نکلے نہ لبوں سے کوئی سسکی نکلے

    جاں کنی وہ کہ فرشتے بھی پناہیں مانگے

    آپ آئیں تو مری آخری ہچکی نکلے

    ایسے نکلا ہے مرے بخت کا تارا دیکھو

    ہاتھ سے ٹوٹ کے بیوہ کے جیوں چوڑی نکلے

    کوئی آئے مرے جینے کا سہارا بن کر

    شاخ سے پھوٹ کے کونپل کوئی ایسی نکلے

    آج پھر دل میں ترے دید کی حسرت جاگی

    کاش پھر کام کوئی تجھ سے ضروری نکلے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے