اپنا محاسبہ کبھی کرنے نہیں دیا

عبید الرحمان

اپنا محاسبہ کبھی کرنے نہیں دیا

عبید الرحمان

MORE BYعبید الرحمان

    اپنا محاسبہ کبھی کرنے نہیں دیا

    خود بینیوں نے ہم کو سنورنے نہیں دیا

    حالات نے اگرچہ سجھائی گداگری

    میری انا نے مجھ کو بکھرنے نہیں دیا

    طوفاں سے کھیلنے کا رہا شوق عمر بھر

    ساحل پہ جس نے مجھ کو اترنے نہیں دیا

    المایوں میں قید رہا اپنا سارا علم

    قلب و نظر کو ہم نے نکھرنے نہیں دیا

    دنیا سے کب کا اٹھ گیا ہوتا میں اے صنم

    لیکن ترے خیال نے مرنے نہیں دیا

    منزل تو میرے سامنے آتی رہی عبیدؔ

    جوش جنوں نے مجھ کو ٹھہرنے نہیں دیا

    مأخذ :
    • کتاب : Aawaz Ke Saye (Poetry) (Pg. 49)
    • Author : Obaidur Rahman
    • مطبع : Sehla Obaid (2001)
    • اشاعت : 2001

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY