aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

اپنے اپنے رنگ میں یکتا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

نوح ناروی

اپنے اپنے رنگ میں یکتا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

نوح ناروی

MORE BYنوح ناروی

    اپنے اپنے رنگ میں یکتا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    حسن کی مورت عشق کا پتلا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    دنیا سے کیا مطلب مجھ کو عالم سے کیا تجھ کو تعلق

    میرا دل بر تیرا شیدا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    چل کر پھر کر دیکھا بھالا جانچا پرکھا سمجھا بوجھا

    سب سے اعلیٰ سب سے ادنیٰ میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    ظلم سے رکھے کام ہمیشہ دعوے کرتا جائے وفا کا

    کون زمانے میں ہے ایسا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    خون جگر سے قول رہا یہ میرے اشک چشم تر کا

    چڑھتا دریا بہتا دریا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    تو ہی تو ہے میں ہی میں ہوں عالم میں عالم سے نرالا

    دنیا میں دنیا سے انوکھا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    دل نہ تجھے لینا تھا مجھ سے جان مجھے دینی تھی نہ تجھ پر

    کیسا دنیا بھر میں رسوا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    کیسی عذرا کیسی لیلیٰ کیسا وامق کیسا مجنوں

    اب مشہور جہاں میں کیا کیا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    یوں تو ہیں معشوق ہزاروں یوں تو ہیں لاکھوں عاشق بھی

    لیکن بہتر نادر یکتا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    نوحؔ یہ باتیں مٹ جائیں گی تیرے میرے مٹ جانے سے

    چاہنے والا عشق و وفا کا میں ہی میں ہوں تو ہی تو ہے

    مأخذ:

    Ejaz-e-Nooh (Pg. ebook-324 page-219)

    • مصنف: محمد نوح صاحب نوح
      • ناشر: اسرار کریمی پریس، الہ آباد

    موضوعات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے