اپنی مرضی سے کہاں اپنے سفر کے ہم ہیں

ندا فاضلی

اپنی مرضی سے کہاں اپنے سفر کے ہم ہیں

ندا فاضلی

MORE BY ندا فاضلی

    اپنی مرضی سے کہاں اپنے سفر کے ہم ہیں

    رخ ہواؤں کا جدھر کا ہے ادھر کے ہم ہیں

    پہلے ہر چیز تھی اپنی مگر اب لگتا ہے

    اپنے ہی گھر میں کسی دوسرے گھر کے ہم ہیں

    وقت کے ساتھ ہے مٹی کا سفر صدیوں سے

    کس کو معلوم کہاں کے ہیں کدھر کے ہم ہیں

    چلتے رہتے ہیں کہ چلنا ہے مسافر کا نصیب

    سوچتے رہتے ہیں کس راہ گزر کے ہم ہیں

    ہم وہاں ہیں جہاں کچھ بھی نہیں رستہ نہ دیار

    اپنے ہی کھوئے ہوئے شام و سحر کے ہم ہیں

    گنتیوں میں ہی گنے جاتے ہیں ہر دور میں ہم

    ہر قلم کار کی بے نام خبر کے ہم ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جگجیت سنگھ

    جگجیت سنگھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY