اور کوئی جو سنے خون کے آنسو روئے (ردیف .. ن)

باقر مہدی

اور کوئی جو سنے خون کے آنسو روئے (ردیف .. ن)

باقر مہدی

MORE BY باقر مہدی

    اور کوئی جو سنے خون کے آنسو روئے

    اچھی لگتی ہیں مگر ہم کو تمہاری باتیں

    ہم ملیں یا نہ ملیں پھر بھی کبھی خوابوں میں

    مسکراتی ہوئی آئیں گی ہماری باتیں

    ہائے اب جن پہ مسرت کا گماں ہوتا ہے

    اشک بن جائیں گی اک روز یہ پیاری باتیں

    یاد جب کوئی دلائے گا سر شام تمہیں

    جگمگا اٹھیں گی تاروں میں ہماری باتیں

    ان کو مغرور بنایا ہے بڑی مشکل سے

    آئینہ بن کے رہیں کاش ہماری باتیں

    ملتے ملتے یوں ہی بیگانے سے ہو جائیں گے

    دیکھتے دیکھتے کھو جائیں گی ساری باتیں

    وہ بہت سوچیں تڑپ اٹھیں مگر اے باقرؔ

    یاد آئیں تو نہ آئیں یہ تمہاری باتیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    اور کوئی جو سنے خون کے آنسو روئے (ردیف .. ن) نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY