اول تو میں رکتا نہیں اور جس سے رکوں میں

معروف دہلوی

اول تو میں رکتا نہیں اور جس سے رکوں میں

معروف دہلوی

MORE BYمعروف دہلوی

    اول تو میں رکتا نہیں اور جس سے رکوں میں

    تا حشر یہ ممکن نہیں پھر اس سے ملوں میں

    یہ اور سنائی کہ مری بات تو سن لے

    جو تیری کہے آن کے اس کی نہ سنوں میں

    یہ خوب کہی دیکھیں گے کب تک نہ ملے گا

    اس بات پہ گر چاہو تو اب شرم کروں میں

    آپس میں اگر چرخ و زمیں دنوں یہ مل جائیں

    تو بھی نہ کبھی تجھ سے ملا ہوں نہ ملوں میں

    تب نام ہے معروفؔ دھرا رہ تو سہی جب

    چھاتی پہ تری آٹھ پہر مونگ دلوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY