بہاریں اور وہ رنگیں نظارے یاد آتے ہیں

رام کرشن مضطر

بہاریں اور وہ رنگیں نظارے یاد آتے ہیں

رام کرشن مضطر

MORE BYرام کرشن مضطر

    بہاریں اور وہ رنگیں نظارے یاد آتے ہیں

    وہ دل کش وادیاں وہ ماہ پارے یاد آتے ہیں

    محبت کے وہ جاں پرور سہارے یاد آتے ہیں

    تری آغوش میں جو دن گزارے یاد آتے ہیں

    وہ موسم وہ سماں وہ دن وہ صبح و شام وہ راتیں

    وہ ہنستے ناچتے گاتے ستارے یاد آتے ہیں

    وہ جھیلیں وہ چمن وہ غنچہ و گل اور وہ سبزہ

    مرے دل کو وہ منظر پیارے پیارے یاد آتے ہیں

    مسرت بخش تھا کتنا ترنم آبشاروں کا

    وہ لہریں وہ سکوں پرور کنارے یاد آتے ہیں

    وہ جلوے حسن کے وہ شاہد رنگیں کی رعنائی

    شباب کیف و مستی کے وہ دھارے یاد آتے ہیں

    وہ زلفیں وہ ادائیں اور وہ رنگ لب و عارض

    غزالیں انکھڑیوں کے وہ اشارے یاد آتے ہیں

    نشاط روح اے میری بہار زندگی مجھ کو

    ترے پہلو میں جو لمحے گزارے یاد آتے ہیں

    مآخذ
    • Raqs-e-bahar

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY